March 8, 2021

News PK

Latest Updates

عمران خان کی بھارت کو مذاکرات کی مشروط پیشکش

وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ کشمیریوں کی تکالیف کا اندازہ ہے۔ کشمیر کا سفیر بن کر مقبوضہ وادی کی آزادی تک ہر پلیٹ فارم پر آواز بلند کرتا رہوں گا۔

کوٹلی میں یوم یکجہتی کشمیر پر تحریک انصاف کے جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ اقوام متحدہ نے وعدہ کیا تھا کہ کشمیر کے لوگوں کو ان کا حق خودارادیت ملے گا مگر  یہ وعدہ اب تک پورا نہ ہوسکا۔ آج اقوام متحدہ اور عالمی دنیا کو ایک بار پھر وہ قراردار اور وعدہ یاد دلانا چاہتا ہوں۔

وزیراعظم نے کہا کہ آج نہ صرف پاکستان بلکہ مسلم دنیا بھی کشمیریوں کے ساتھ کھڑی ہے۔ اگر مسلمان ممالک کی حکومتیں کسی وجہ سے اس کاز کو سپورٹ نہیں کررہی تو عوام کشمیریوں کے ساتھ ہیں۔ اس کے ساتھ وہ لوگ جو انصاف پسند ہیں۔ چاہے مسلمان نہ بھی ہوں۔ وہ بھی کشمیریوں کے ساتھ ہیں۔ انصاف پسند غیر مسلم بھی اقوام متحدہ کو کہتے ہیں کہ کشمیریوں کو ان کا حق دو۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ ہم سب کو اندازہ ہے کہ کشمیری عوام پر کیا گزرتی ہے۔ ہمیں پتہ ہے کہ وہ کس قسم کے ظلم برداشت کر رہے ہیں۔ امریکا کے سابق صدر ٹرمپ کے سامنے بھی تین بار مسئلہ کشمیر اٹھایا، جب تک کشمیر آزاد نہیں ہوگا، اُس وقت تک کشمیریوں کیلئے آواز بلند کروں گا۔

انہوں نے کہا کہ ہماری حکومت آئی تو پوری کوشش کی بھارت کے ساتھ دوستانہ ماحول کو فروغ دیں، پوری کوشش کی بھارت کو سمجھائیں کشمیر کامسئلہ ظلم سے حل نہیں ہوگا۔ تاریخ بتاتی ہے کہ کوئی بھی طاقتور فوج آبادی کیخلاف نہیں جیت سکتی۔ قوم کھڑی ہوجائے تو بڑی سے بڑی فوج فیل ہوجاتی ہے۔ اس لیے امریکا سپر پاور ہونے کے باوجود ویت نام کی جنگ نہیں جیت سکھا۔ وہاں کے تیس لاکھ لوگوں نے قربانی دے کر آزادی حاصل کی۔ افغانستان، الجیریا کی مثال بھی ہمارے سامنے موجود ہے۔

عمران خان نے کہا کہ بھارت 9 لاکھ سے زائد فوج بھی لے آئے تو کشمیریوں کو نہیں دبا سکتا کیونکہ کشمیر میں پیداہونے والا ہر بچہ دل میں آزادی کا جذبہ لے کر پیدا ہوتا ہے۔ بھارت نواز کشمیری سیاستدان بھی آج آزادی کی باتیں کر رہے ہیں۔

وزیراعظم نے بھارت کو پیش کش کی اگر وہ مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کا فیصلہ واپس لے تو پاکستان بات چیت کیلئے تیار ہے۔

متعلقہ خبریں