39

اسرائیلی فوج نے سرحدی خلاف ورزی پر مرغی کو حراست میں لے لیا

لبنانی بچہ اپنے بھائی کے ساتھ ایک دن پہلے ہی پانے کے لیے مرغیاں لے کر آیا تھا۔(فوٹو، انٹرنیٹ)

لبنانی بچہ اپنے بھائی کے ساتھ ایک دن پہلے ہی پانے کے لیے مرغیاں لے کر آیا تھا۔(فوٹو، انٹرنیٹ)

بیروت: اسرائیلی فوج نے سرحد کی خلاف ورزی پر لبنانی بچے کی مرغی کو حراست میں لے لیا۔

خلیجی خبر رساں ادارے کے مطابق جیسے ہی بچے کی مرغی نے لبنان اور اسرائیل کی درمیانی سڑک پار کی  اسرائیلی فوجی گھبراہٹ کا شکار ہوگئے اور ہوائی فائرنگ شروع کردی۔

مقامی صحافی کو حسین شرتونی نے بتایا کہ وہ اپنے بھائی کے ساتھ گھر پر پالنے کے لیے ایک روز پہلے ہی مرغیاں لے کر آیا تھا۔ صبح کے وقت جب وہ دانہ ڈالنے کے لیے مرغیوں کے ڈربے کے پاس پہنچا تو ان میں سے ایک مرغی نے اسرائیلی سرحد کی جانب دوڑ لگادی۔

شرتونی کے گھر سے صرف 70 میٹر کے فاصلے پر اسرائیلیوں کی لگائی گئی باڑ کے نزدیک جیسے ہی یہ مرغی پہنچی تو اسرائیلی گھبرا گئے کیوں کہ وہاں نصب سینسرز سے انہیں اطلاع ملی کہ کوئی سرحد عبور کررہا ہے۔ یہ اشارہ ملتے ہی انہوں نے ہوائی فائرنگ شروع کردی۔

مقامی صحافی سے بات کرتے ہوئے شرتونی نے بتایا کہ اس کی مرغی سرحد عبور کرگئی اور ابھی تک واپس نہیں آئی، اس کی مرغی اسرائیلی فوجیوں نے رکھ لی ہے  اور وہ اپنی مرغی ہر صورت واپس لانا چاہتا ہے۔

سرحد سے متصل اس قصبے کی بلدیہ کے سربراہ عبدالمنعم کا کہنا ہے کہ اس طرح ایک چھوٹے واقعے پر ہوئی فائرنگ کرنا سراسر ایک جارحانہ اقدام ہے۔ یاد رہے کہ اسرائیل نے ہمیشہ لبنان پر کڑی نگرانی رکھی ہے تاہم اب اس علاقے میں ڈرونز اور جنگی طیاروں کی پرازوں میں کئی گنا اضافہ ہوگیا ہے۔

اس سے قبل 2019 میں بھی ایک ایسا ہی واقعہ پیش آیا تھا جب تشتش نامی ایک بندر سرحدی گاؤں سے باڑ عبور کرکے شمالی اسرائیل میں داخل ہوگیا جہاں اس کی موجودگی کے باعث افراتفری پھیل گئی تھی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں