October 27, 2020

News PK

Latest Updates

پیمرا کی اے آر وائی ڈیجیٹل اور ہم ٹی وی کے ڈرامہ سیریل ” عشقیہ” اور ” پیار کے صدقی” کی نشرمکرر پر پابندی

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین – این این آئی۔ 04 ستمبر2020ء) پیمرانے اے آر وائی کے ڈرامہ سیریل عشقیہ اور ہم ٹی وی کے ڈرامہسیریل پیار کے صدقے میں سماجی اور مذہبی اقدار کے منافی مواد نشر کرنے پر کاروائی کرتے ہوئے پیمرا آرڈیننس کے سیکشن 27 کے تحت دونوں ڈراموں کی نشر مکرر پر پابندی عائد کر دی ہے ۔ان دونوں ڈرامہ سیریل کی نہ صرف اے آر وائی ڈیجیٹل، ہم ٹی وی بلکہ اے آر وائی زندگی اور ہم ستارے پر بھی نشر کرنے پرپابندی ہو گی۔ مزیدبرآں اے آر وائی کی ڈرامہ سیریل جلن کے خلاف موصول ہونے والی شکایات پر چینل کو ڈرامہ کے مواد کا جائزہ لینے کا حکم دیا ہے۔ مذکورہ ڈرامے کے حوالے سے مزید شکایات مو صول ہونے یا ڈرامے کے سکرپٹ کو پاکستانی اقدار کے مطابق نہ بنائے جانے پر پیمرا آرڈیننس کے سیکشن 27 کے تحت کاروائی کی جائے گی۔

(جاری ہے)

اس ضمن میں ناظرین کی جانب سے ڈراموں میں دکھائے جانے والے مواد بلخصوص ڈراموں کے مرکزی خیال پر تنقید کی جارہی ہے۔

ناظرین میں مقدس رشتوں کی پامالی سے متعلق مواد نشر کرنے پرشدید اضطراب پایا جاتاہے۔ ناظرین روزانہ کی بنیاد پر پاکستان سٹیزن پورٹل ، پیمرا کے سوشل میڈیا اکاوئنٹس اور پیمرا کال سینٹر پر متعدد شکایات درج کرارہے ہیں ۔ پیمرا متعلقہ چینلزکو ناظرین کے ڈراموں کے مواد کے حوالے سے تخفظات سے متعدد بار آگاہ کرچکاہے اورچینلز کو ڈراموں میں نشر کیے جانے والے مواد کو معاشرتی،مذہبی، سماجی اور اخلاقی اقدارکے مطابق بنانے کی ہدایت کی۔تاہم چینلز کی جانب سے ڈراموں کے سکرپٹ میں خاطرخواہ بہتری نہ ہونے پر مورخہ 18 اگست کو تمام چینلز کو مفصل مراسلہ / ہدایت نامہ جاری کیا گیا اور ڈراموں کے مواد کو پاکستانی اقدار کے مطابق بنائے جانے سے متعلق حتمی ہدایت جاری کی گئی ۔پیمرا نے نہ صرف تمام ٹی وی چینلز کو بلکہ تمام میڈیا ہاؤسزاور پروڈکشن ہاؤسزکو ڈراموں میں نشر کیے جانے والے مواد کا بغور جائزہ لینے کا کہاہے۔ تمام میڈیا ہاؤسزکو یہ بھی بارو کرایا گیا ہے کہ قطع نظر اس کے کہ ڈرامہ سیریل کی تیاری میں کتناسرمایہ اور وقت صرف ہواہو اگر اس کا مواد پاکستانی اقدار کے منافی ہے اور ناظرین کی توقعات کے برعکس ہے تو اتھارٹی بغیر کسی وارننگ کے مذکورہ ڈرامہ پر پابندی عائد کردے گی۔ لہٰذا تمام اسٹیک ہولڈرز سے استدعا کی ہے کہ وہ مستقبل میں بننے والے ڈراموں کے موادپر فلفور نظرثانی کریں۔